وں پر سب کی رسائی ہو سکےتمام زبانوں کی فہرست دیکھیں جن میں گلوبل وائسز پر ترجمہ کیا جاتا ہے تاکہ دنیا بھر کی کہانیا

کویت : ٹماٹروں کو سڑنے دو !

tea

کویت میں ٹماٹر اب ایک ماہ قبل سے آٹھ گنا زیادہ مہنگے ہو گئے ہیں۔ اور انٹرنیٹ استعمال کرنے والے مسافت میں قیمتوں میں تبدیلی کو نہیں لے رہے۔ وہ وضاحت نہیں تلاش کر سکے کہ کیوں ٹماٹر کے ایک باکس کی قیمت صرف کچھ ہی دنوں میں آدھے دینارسے بڑھ کر(1.70 $) سے کے ڈی 4 ($14) تک ہو گئی ہیں۔

الدیستر نے لکھا:

ہمارے پارلیمنٹ کے بیکاراراکین سے پر جوش خطاب ، میں وزیر اعظم نے دنیا بھر میں اپنے مسلسل سفر کے لیے یہ کہتے ہوئے مُعافِی مانگی کہ وہ کویت کو محفوظ کرنے کے راستے تلاش کر رہے تھے۔ اور اسکے علاوہ پندرہ سالوں کے بعد خلیجی کھانوں کی ضرورت تھی۔

پیارے وزیر اعظم صاحب،
کیا آپ جانتے ہیں کہ وقت نے آپکو ہرا دیا ہے۔ اور ہم، 2010 میں سبزیوں کی قیمتوں میں اضافہ سے
پریشان ہیں ، خاص کر کہ اسکے لیڈر، ٹماٹر سے؟

این بیگزی کہتے ہیں کہ مسئلہ یہ نہیں کہ قیمتوں میں اضافہ کے بارے میں کیا کیا جائے بلکہ اسکے ساتھ کیسے نمٹا جائے:

مسئلہ صارفین کی ثقافت میں ہےجو اہم سائیکل کو نہیں سمجھتے جس پہ ہر تاجر انحصار کرتا ہے۔ تاجر صارفین کو خلیج میں نہیں رکھ سکتا وہ آخر میں اپنا سامان فروخت کرے دے گا کیونکہ اگر ، نقصانات کے مختلف درجے ہوتے ہیں اور کوئی بھی مکمل طور پرنقصان نہیں چاہے گا۔ ہر کوئی فروخت کرنا چاہتا ہے ، اور اگر تاجر آج ایک دینار کھو دیتا ہے۔ وہ ایک اچھا گاہک پائے گا جو کہ کے ڈی 2 تک خریدے گا۔ اور اس طرح تجارتی سائیکل جاری رہتا ہے۔کل، انڈوں کی قیمتوں میں اضافہ ہو رہا تھا اور آج، ٹماٹروں کی۔ کل یہ چاولوں یا بریڈ کے ساتھ بھی ہو سکتا ہے۔ پاکستان — پشاور میں زراعت کی پیداوار پر غور کرتے ہوئے — جو کہ سیلاب میں تباہ ہو گئے ہیں۔

ایم- وٹامنز حیران ہے کہ کیوں پارلیمنٹ کے ممبران قیمتوں میں اضافے کے بارے میں کچھ نہیں کرتے:

پارلیمان اور حزب اختلاف کے اراکین ٹماٹروں کی قیمتوں میں اضافے کے خلاف احتجاج کے لیے لیکچرز، اجتماعات اور ریلیاں کیوں نہیں نکالتے؟ اضافے کے بارے میں پارلیمنٹ میں پوچھ گچھ کے لیے انہوں نے وزیر اعظم کودھمکی کیوں نہیں دی؟ انہوں نے یہ کیوں نہیں بتایا کہ قیمتوں کے اس بڑے اضافے کے پیچھے کون ہے ور ایک تحقیقاتی کمیٹی قائم کیوں نہیں کی گئی؟

اور جیسا کہ کویت میں ہر مسئلہ سے،ٹویٹراس موضوع کے بارے میں تبصرے اور مزاق سے بھر چکا ہے۔

بوجیج کہتا ہے:

نئی پارلیمنٹ مدت کے آغاز کے موقع پرہر رہنما کو مفت ٹماٹروں کا باکس ملےگا۔

اور فایونی مرکب میں کھیلوں کو بَل دیتے ہوئے کہتے ہیں:

کویت فٹ بال ایسوسی ایشن نے ہر کھلاڑی کو چیمپئن شپ جیتنے کے لئے ٹماٹروں کا ایک باکس دینے کا فیصلہ کیا ہے۔

بات چیت شروع کریں

براہ مہربانی، مصنف لاگ ان »

ہدایات

  • تمام تبصرے منتظم کی طرف سے جائزہ لیا جاتا ہے. ایک سے زیادہ بار اپنا ترجمہ جمع مت کرائیں ورنہ اسے سپیم تصور کیا جائے گا.
  • دوسروں کے ساتھ عزت سے پیش آئیں. نفرت انگیز تقریر، جنسی، اور ذاتی حملوں پر مشتمل تبصرے کو منظور نہیں کیا جائے.